•  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  Yum
  •  
  •  
  •  
  •   
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  1. دنیا بھر میں کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے افراد کی تعداد 25 لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے جبکہ ایک لاکھ 75 ہزار سے زیادہ لوگ ہلاک ہو چکے ہیں۔
  2. برطانوی وزیر صحت میٹ ہینکاک کا کہنا ہے کہ جمعرات سے آکسفورڈ یونیورسٹی کی ٹیم انسانوں پر کورونا وائرس کی ویکسین کا ٹرائل شروع کرے گی۔
  3. سعودی عرب کی سرکاری خبر رساں ایجنسی (ایس پی اے) کے مطابق سعودی عرب ماہ رمضان کے دوران متعدد شہروں میں نافذ کرفیو کے اوقات میں تبدیلی کا ارادہ رکھتا ہے تاکہ لوگوں کو ضروری سامان کی خریداری کے لیے زیادہ
  4. امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکہ کی امیگریشن پر عارضی پابندی کا اعلان کیا ہے
  5. اس وقت کووڈ 19 سے امریکہ اور یورپ سب سے زیادہ متاثرہ ہیں۔ یورپ میں ایک لاکھ سے زیادہ اموات ہو چکی ہیں جبکہ امریکہ میں مصدقہ متاثرین کی تعداد سات لاکھ 88 ہزار سے زیادہ ہے۔
  6. روحانی کی پوتن کو تعاون کی صلاح

    ایرانی صدر حسن روحانی نے اپنے روسی ہم منصب ولادمیر پوتن سے کہا ہے کہ دونوں ممالک کو کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے تعاون سمیت دوطرفہ تجارت بھی جاری رکھنی چاہیے۔

    خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق ایران کی صدارتی ویب سائٹ پر بتایا گیا ہے کہ ایران مشرق وسطیٰ کے ممالک میں سب سے زیادہ متاثر ہونے والا ملک ہے اور روس میں بھی کورونا متاثرین میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔

    روسی ہم منصب سے گفتگو کے موقع پر صدر روحانی نے کہا کہ دونوں ممالک کے حکام کو ضابطہ صحت کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے دو طرفہ تجارت کے لیے کوشش کرنی چاہیے۔

    امریکی پابندیوں کے پیش نظر صدر حسن روحانی ملکی معیشت کی بہتری کے لیے کوشاں ہیں۔

    انھوں نے اپنی گفتگو میں یہ بھی کہا کہ روس اور ایران کو خطے کے مسائل کے حل کے لیے بھی اپنے تعاون کو تیز کرنا چاہیے۔

    روس اور ایران شام میں صدر بشار الاسد کی مل کر مدد کر رہے ہیں۔

    ایرانی صدر نے قطر کے امیر شیخ تمیم بن حماد اتھانی سے بھی فون پر رابطہ کیا۔ انھوں نے کہا کہ خطے کے ممالک کو تعاون اور دوستی کے علاوہ مل کر سکیورٹی اور دیرپا استحکام کے لیے کام کرنا چاہیے